Urdu SMS: SMS Zone
31 Oct 2017 - 23:20 * REHAN DS *
Urdu Ghazals
گلاب آنکھیں، شراب آنکھیں
یہی تو ہيں لا جواب آنکھیں
انھی میں الفت،انھی میں نفرت
ثواب آنکھیں، عذاب آنکھیں
کبھی نظر میں بلا کی شوخی
کبھی سراپا حجاب آنکھیں
کبھی چھپاتی ہيں راز دل کے
کبھی ہيں دل کی کتاب آنکھیں
کسی نے دیکھی تو جھیل جیسی
کسی نے پائى سراب آنکھیں ..
وہ آئے تو لوگ مجھ سے بولے
حضور آنکھیں، جناب آنکھیں
عجیب تھا گفتگو کا عالم
سوال کوئى،جواب آنکھیں
یہ مست مست بے مثال آنکھیں
مصوری کا ..........کمال آنکھیں
شراب رب نے حرام کر دی
مگرکیوں ہیں حلال آنکھیں ..
ہزاروں ان پر قتل ہوں گے
خدا کے بندے سنبھال آنکھیں
0 1 0
Comments 15
16 Jul 2019 - 11:41
* Ali DS
جو غیر تھے وہ اسی بات پر ہمارے ہوئے
کہ ہم سے دوست بہت بے خبر ہمارے ہوئے
کسے خبر وہ محبت تھی یا رقابت تھی
بہت سے لوگ تجھے دیکھ کر ہمارے ہوئے
اب اک ہجوم ِ شکستہ دلاں ہے ساتھ اپنے
جنہیں کوئی نہ ملا، ہمسفر ہمارے ہوئے
کسی نے غم تو کسی نے مزاج ِ غم بخشا
سب اپنی اپنی جگہ چارہ گر ہمارے ہوئے
بجھا کے طاق کی شمعیں نہ دیکھ تاروں کو
اسی جنوں میں تو برباد گھر ہمارے ہوئے
وہ اعتماد کہاں سے فراز لائیں گے
کسی کو چھوڑ کے وہ اب اگر ہمارے ہوئے
0
13 Jul 2019 - 07:41
* Ali DS
smile
0
11 Jul 2019 - 16:12
* REHAN DS *
Topic Starter
جب بھی تری یادوں کی چلنے لگی پُروائی
ہر زخم ہوا تازہ ، ہر چوٹ ابھر آئی
اس بات پہ حیراں ہیں ساحل کے تماشائی
اک ٹوٹی ہوئی کشتی ہر موج سے ٹکرائی
میخانے تک آ پہنچی انصاف کی رسوائی
ساقی سے ہوئی لغزش رندوں نے سزا پائی
ہنگامہ ہوا برپا، اک جام اگر ٹوٹا--!!!
دل ٹوٹ گئے لاکھوں، آواز نہیں آئی
اک رات بسر کر لیں آرام سے دیوانے
ایسا بھی کوئی وعدہ!! اے جانِ شکیبائی
کس درجہ ستم گر ہے یہ گردشِ دوراں بھی
خود آج تماشا ہیں، کل تھے جو تماشائی
کیا جانئے کیا غم تھا مل کر بھی یہ عالم تھا
بے خواب رہے وہ بھی، ہم کو بھی نہ نیند آئی
(حفیظ بنارسی)
0
28 Jun 2019 - 14:17
* REHAN DS *
Topic Starter
وہ منزلیں بھی کھو گئیں
وہ راستے بھی کھو گئے
جو آشنا سے لوگ تھے
وہ اجنبی سے ہو گئے
نہ چاند تھا نہ چاندنی
عجیب تھی وہ زندگی
چراغ تھے کہ بُجھ گئے
نصیب تھے کہ سو گئے
یہ پوچھتے ہیں راستے
رُکے ہو کس کے واسطے
چلو کہ تم بھی اب چلو
وہ مہرباں بھی کھو گئے !
0
31 May 2018 - 18:17
Ahan Nice...
0
26 Mar 2018 - 22:08
* REHAN DS *
Topic Starter
رنجش ہی سہی دل ہی دکھانے کے لیے آ 
آ پھر سے مجھے چھوڑ کے جانے کے لیے آ
کچھ تو مرے پندار محبت کا بھرم رکھ 
تو بھی تو کبھی مجھ کو منانے کے لیے آ
پہلے سے مراسم نہ سہی پھر بھی کبھی تو 
رسم و رہ دنیا ہی نبھانے کے لیے آ
کس کس کو بتائیں گے جدائی کا سبب ہم 
تو مجھ سے خفا ہے تو زمانے کے لیے آ
اک عمر سے ہوں لذت گریہ سے بھی محروم 
اے راحت جاں مجھ کو رلانے کے لیے آ
اب تک دل خوش فہم کو تجھ سے ہیں امیدیں 
یہ آخری شمعیں بھی بجھانے کے لیے آ 
0
26 Mar 2018 - 21:58
* REHAN DS *
Topic Starter
وہ جب ناراض ہوتا ہے,
میں اکثر اس سے کہتی ہوں.
ہزاروں عیب ہیں مجھ میں
تو رشتہ توڑ لو نہ تم..
مجھے پھر چھوڑ دو ناں تم.
وہ کچھ لمحے تو
بالکل_____چپ ہو جاتا ہے..
امڈتے اشکوں کو اپنے
چھپا کر پلکوں کے پیچھے..
دبا کر درد سینے میں
بڑے ہی پیار سے____بے ربط لہجے میں
مرے ہاتھوں کو اپنے ہاتھ میں لے کر تھپکتا ہے..
وہ کہتا ہے..
دوبارہ ہجر کی باتیں نہ کرنا تم..
مرا دل ایسی باتوں سے _____دھڑکنا بھول جاتا ہے.
مری سانسیں اٹکتی ہیں..
زمیں رکتی ہوئی معلوم ہوتی ہے
مری جاں سوچ کر دیکھو..
کبھی ایسا جو ہو جائے
زمیں چلنے سے رک جائے..
تباہ ہو جائے____گی دنیا
نہ دن سے ____رات ہو گی..
اور نہ کوئی رُت_____ہی بدلے گی
جدھر نظریں____اٹھیں گی پھر
بیاباں دشت ہی ہو گا..
مری جاں یاد رکھنا تم
میں زندہ ہوں فقط______جو ساتھ ہے ترا
رہیں سانسیں مری چلتی
ضروری پیار ہے ترا..
میں یہ بھی جانتا ہوں جاں..
ذرا ہوں تیز غصے کا
مگر تم ہو_____جنوں مرا..
یہ ہے معلوم تم کو بھی
ہو حاصل زندگی کا تم..
چلو مانا کہ تم کو چھوڑ دیتا ہوں
میں رشتہ توڑ لیتا ہوں..
مگر بولو
مرے بن رہ سکو گی تم..؟
نہ کوئی خواب ٹوٹے گا..؟
لبوں پہ د
0
22 Mar 2018 - 20:46
* REHAN DS *
Topic Starter
تیرے عشق نے بخشی ہے یہ سوغات مُسلسل
تیرا زکر ہمیشہ تیری بات مُسلسل
اک مُدت ہوئی تیرے بام و در سے نکلے
رہتی ہے پھر بھی تجھ سے مُلاقات مُسلسل
دل لگی دل کی لگی بن جاتی ہےجب
تصور میں گُزرتی ہے رات مُسلسل
جب سے دیکھا زلف پریشاں کا عالم
الجھے ہوے رہتے ہیں میرے دن رات مسلسل
میں محبت میں اُس مقام پہ ہوں جہاں
میری ذات میں رہتی ہے تیری ذات مُسلسل
0
20 Nov 2017 - 13:21
* Ali DS
smile
0
20 Nov 2017 - 12:16
* REHAN DS *
Topic Starter
ﮐﺴﯽ ﭘﺮ ﻧﻈﻢ ﻟﮑﮭﻨﮯ ﺳﮯ۔۔۔۔
ﮐﻮﺋﯽ ﻣِﻞ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﺗﺎ۔۔۔۔۔
ﮐﻮﺋﯽ ﺗﻌﺮﯾﻒ۔۔۔۔۔
ﺑﺎﻧﮩﻮﮞ ﮐﮯ ﺑﺮﺍﺑﺮ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮬﻮﺗﯽ۔۔۔۔۔
ﮐﺴﯽ ﺁﻭﺍﺯ ﮐﮯ ﭘﺎؤﮞ۔۔۔۔۔
ﮐﺒﮭﯽ ﺩﻝ ﭘﺮ ﻧﮩﯿﮟ ﭼﻠﺘﮯ۔۔۔۔۔
ﮐﺒﮭﯽ ﮐﺸﮑﻮﻝ ﻣﯿﮟ۔۔۔۔۔
ﻗﻮﺱ ﻭ ﻗﺰﺡ ﺍُﺗﺮﯼ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﯾﮑﮭﯽ۔۔۔۔۔۔
ﺻﺤﯿﻔﮧ ﺭِﺣﻞ ﭘﺮ ﺭﮐﮭﻨﮯ ﺳﮯ۔۔۔۔۔۔
ﻗﺮﺁﮞ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﻨﺘﺎ۔۔۔۔۔۔
ﮐﺴﯽ ﻧﮯ ﺁﺝ ﺗﮏ۔۔۔۔۔
ﺷﺎﻋﺮ ﮐﮯ ﺁﻧﺴﻮ۔۔۔۔۔
ﺧﻮﺩ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﻮﻧﭽﮭﮯ۔۔۔۔۔
ﺩﻻﺳﮧ۔۔۔۔۔
ﻟﻔﻆ ﮐﯽ ﺣﺪ ﺗﮏ ﮬﯽ ﺍﭘﻨﺎ ﮐﺎﻡ ﮐﺮﺗﺎ ﮬﮯ۔۔۔۔۔۔
ﮐﺴﯽ ﺧﻮﺍﮬﺶ ﮐﻮ۔۔۔۔۔۔
ﺳﯿﻨﮯ ﺳﮯ ﻟﮕﺎﻧﮯ۔۔۔۔۔۔
ﮐﯽ ﺍﺟﺎﺯﺕ ﺗﮏ ﻧﮩﯿﮟ ﮬﻮﺗﯽ۔۔۔۔۔۔
ﺗﻤﮭﺎﺭﯼ ﺿﺪ ﮐﻮ ﭘُﻮﺭﺍ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﺩﯾﮑﮭﻮ۔۔۔۔۔۔
ﺳﺘﺎﺭﮮ ، ﭼﺎﻧﺪ، ﺳُﻮﺭﺝ ، ﺭﻭﺷﻨﯽ، ﺧﻮﺷﺒﻮ۔۔۔۔۔۔
ﺗﻤﮭﺎﺭﮮ ﺩَﺭ ﭘﮧ ﮐﯿﺎ ﮐﯿﺎ ﺩﮬﺮ ﺩﯾﺎ ﺩﯾﮑﮭﻮ۔۔۔۔۔
ﮔُﻞِ ﻓﺮﺩﺍ۔۔۔۔۔۔۔
ﺍﺑﮭﯽ ﮐِﮭﻞ ﺟﺎؤ۔۔۔۔۔
ﮐﮩﻨﮯ ﺳﮯ۔۔۔۔
ﮐﻮﺋﯽ ﮐِﮭﻞ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﺗﺎ۔۔۔۔۔۔
ﮐﺴﯽ ﭘﺮ ﻧﻈﻢ ﻟﮑﮭﻨﮯ ﺳﮯ۔۔۔۔۔۔۔
ﮐﻮﺋﯽ ﻣِﻞ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﺗﺎ۔۔۔۔۔۔!
0
1 Nov 2017 - 19:27
* REHAN DS *
Topic Starter
ہر بات پر سزا ۔۔
ہر بات پر حساب صاحب
کہاں گئے محبتوں کے وہ دلکش خواب صاحب!
اب تو الجھنیں ہیں کہ سلجھتی ہی ںہیں
کبھی تم تھے سوال
ہم تھے جواب صاحب۔
کیا شیوہ ہے کیسی یہ خوۓ بے نیازی غالب
یاں برسنے کو ترسے
میری نگاہِ سیلاب صاحب
سمندروں میں بھی صحرا کی خاک چھانی ہے
ہم کسے کہیں آب؟
ہم کسے کہیں سراب صاحب؟
بے سبب محبت تھی بے سبب تھا قرار اپنا
کیوں دور ہونے کو
ڈھونڈے ہو اسباب صاحب
تشنگی مٹتی نہیں اور جان ہے کہ نکلتی نہیں
آج بھول چکے ہم
وجہء سیراب صاحب
ہلکی سی مسکراہٹ اور پھر دیر تلک خاموشی
خوب ہیں ۔۔ ماشاءاللہ ۔۔
اطوارِجناب ۔۔ صاحب
تم ساتھ ہو کر بھی ساتھ مگر لگتے نہیں
کسے کہیں غیر ہم
کسے کہیں احباب صاحب
کہہ دیجیے ''بدگمانی نے تمہیں کہیں کا نہ رکھا''
راضی ہیں ہم ہونے کو،
پھر ۔۔۔ لاجواب ۔۔۔۔ صاحب
سوچا ہے چلیں گے اور رک کر نہ دیکھیں گے
ختم ہوۓ چاہتا ہے،
توقع کا ہر باب صاحب
جسے کہہ نہ سکے،
لو آج اسے کہتے ہیں
تمہی نصابِ زندگی، اور تمہی کتاب صاحب...!!
0
1 Nov 2017 - 18:51
* Ali DS
Very Nice
0
1 2 >
Statok.net Online: 1 & 10 PakSites.Top