Mohsin Naqvi Poetry
Authorization
Site Sections
Downloads News Blogs Guestbook Music Photos Videos Groups Users Forum Games
© geopak.mobi - 2022

Mohsin Naqvi Poetry

عنایتوں کا کبھی وحشتوں کا قائل ہوں
محبتوں میں بڑی شدتوں کا قائل ہوں
زمین شہر بھلے مجھ پہ تنگ کرو لیکن
تمہیں خبر نہیں میں ہجرتوں کا قائل ہوں
یہ سوچ کر میرے آنگن میں تم دیا رکھنا
ہوا کا دوست ہوں میں آندھیوں کا قائل ہوں
ہر ایک موڑ پہ میں دل کی بات سنتا ہوں
میں راہ عشق میں کب مشوروں کا قائل ہوں
کسی بھی شخص کو دشمن میں کہہ نہیں سکتا
میں دشمنی میں بھی چند ضابطوں کا قائل ہوں
محسن نقوی

Subsection: Urdu SMS
Section: SMS Zone
Last edited REHAN - 6 Oct 2021, 12:55
Comments 6
کچھ حادثوں سے گر گئے محسن زمین پر ,
ہم رشک آسمان تھے ابھی کل کی بات ہے🤔
12 May 2022, 10:09
0
کچھ حادثوں سے گر گئے محسن زمین پر ,
ہم رشک آسمان تھے ابھی کل کی بات ہے.
20 Mar 2022, 10:31
0
ﮨﻢ ﺍﯾﺴﮯ ﺧﺎﮎ ﻧﺸﯿﮟ ﮐﺐ ﻟُﺒﮭﺎ ﺳﮑﯿﮟ ﮔﮯ ﺍُﺳﮯ
ﻭﮦ ﺍﭘﻨﺎ ﻋﮑﺲ ﺑﮭﯽ ﻣﯿﺰﺍﻥِ ﺯﺭ ﻣﯿﮟ ﺗﻮﻟﺘﺎ ﮨﮯ
ﻣﺤﺴﻦ ﻧﻘﻮﯼ
6 Oct 2021, 12:24
0
ﻣﯿﮟ ﺍُﺱ ﮐﯽ ﻗﯿﺪ ﺳﮯ ﺁﺯﺍﺩ ﮐﮩﺎﮞ ہوﮞ ﻣُﺤﺴﻦ۔۔۔
ﺑﻨﺎ ﮐﮯ۔۔ﺭﮐﮭﺘﺎ ہے ﺳﻮﭼﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﯾﺮﻏﻤﺎﻝ ﻣُﺠﮭﮯ۔۔۔!
6 Oct 2021, 12:24
0
..ﺣﺸﺮ ﻣﯿﮟ ﮐﺎﻡ ﺁﺋﯿﮟ ﮔﯽ ﺷﺎﯾﺪ
...ﭼﻨﺪ ﺁﮨﯿﮟ ﺳﻨﺒﮭﺎﻝ ﺭﮐﮭﯽ ﮨﯿﮟ
...ﺁﺅ ﻟﮯ ﺟﺎﺅ ﺗﯿﺮﮮ ''ﻣﺤﺴﻦ'' ﻧﮯ
...ﺳﺐ ﻭﻓﺎﺋﯿﮟ ﺳﻨﺒﮭﺎﻝ ﺭﮐﮭﯽ ہیں
محسن نقوی
6 Oct 2021, 12:24
0
‏ﺧُﻮﺩ ھﯽ ھﯿﮟ ﺑﺎﻋﺚِ ﺗﮑﻠﯿﻒ , ھﻢ ﺍﭘﻨـﮯ لیۓ ﻣُﺤﺴﻦؔ
‏نہ ھﻢ ھﻮتے ، ﻧﮧ ﺩِﻝ ھﻮﺗﺎ ، ﻧﮧ ﺩِﻝ ﺁﺯﺍﺭﯾﺎﮞ ھﻮﺗﯿﮟ
6 Oct 2021, 12:24
0
Sorry, comments are not available for you
Back
Advertisement

Earnings by viewing Ads
Daily earns just click View Ads